About the author

One Comment

  1. 1

    Mehar Afshan

    کن کن چیزوں کو درست کروگے میرے بھائی ان روایت میں سے؟

    مختصرا بتا دیتی ہوں کہ عورت کی تذلیل سے شروع ہو کر نبی کریم کی تذلیل تک ،اور قرآنی الفاظ کے من مانے تراجم سے لے کر من مانی اور جھوٹے مردانہ غرور اور تکبر سے لبریز تفاسیر تک سب کی جڑ میں انہی نام نہاد محدثین اور مفسرین کی کارفرمائیاں بیٹھی ہوئی ہیں۔۔

    عورت کو منحوس، ناقص العقل ،ناقص الدین،جہنم کا ایندھن ،حکمرانی کے ناقابل، گناہ اور فساد کی جڑ، مرد سے کم تر کہ جس کی دیت بھی مرد سے آدھی ہو، اسے گھروں میں قید کردینا یہاں تک کہ وہ اپنے ماں باپ سے بھی شوہر کی اجازت کے بغیر نہیں مل سکتی چاہے ماں باپ بستر مرگ پر ہی ہوں ،دروازے کے پردے کو زبردستی اس پر سر سے پیر تک مسلط کردینا،مردوں کی خدمت کے لیئے پیدا کی گئی ایک چیز، ان سے کم تر اس کا حیض گندگی ناپاکی،خواہ اسی گندگی اور ناپاکی سے یہ اعلی و ارفع مرد تخلیق پائے ہوں۔

    پھر نبی کریم کی سیرت پر گندے بہتان چھ سال کی بچی سے شادی نو سال کی بچی سے صحبت، بیویوں سے چھپ کر لونڈیوں سے تعلق قائم کرنا، اپنے ذاتی عناد کے لیئے لوگوں کو قتل کروانا، اور فورا ہی ان کی بیویوں بیٹیوں سے جسمانی تعلق قائم کرنا یوں جیسے بس اسی اہم کام کے لیئے تو انہیں دنیا مین بھیجا گیا تھا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

    ان کا اور اللہ میاں دونوں کا نعوذ باللہ موسی سے کم عقل ہونا کہ پچاس نمازیں کم کروانے کے لیئے بار بار عرش کے چکر لگانا وغیرہ وغیرہ

    کہاں تک سنیں گے کہان تک سنائیں؟

    Reply

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: برائے مہربانی اسے شیئر کیجئے۔۔۔!! شکریہ