نواز شریف کی رہائش گاہ پر نیب کے نوٹسز چسپاں

لاہور: قومی احتساب بیورو (نیب) نے سابق وزیراعظم نواز شریف کی رہائش گاہ جاتی امراء کے مرکزی دروازے پر دو نوٹس چسپاں کرتے ہوئے انہیں رہائشی ملکیت کی فروخت سے باز رہنے اور 26 ستمبر کو اسلام آباد کی احتساب عدالت میں پیش ہونے کا حکم جاری کردیا۔

آئی بی سی کی رپورٹ کے مطابق ان نوٹسز میں سے ایک میں نواز شریف کو مخاطب کرکے کہا گیا ہے کہ ’الزامات کا جواب دینے کے لیے آپ کی حاضری نہایت اہم ہے لہذا آپ کو اسلام آباد کی احتساب عدالت کے کورٹ نمبر 1 میں 26 ستمبر کی صبح 9 بجے پیش ہونے کی ضرورت ہے‘۔

شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر ایک عہدےدار نے ڈان کو بتایا کہ دوسرے نوٹس میں سابق وزیراعظم کے اپنی رہائش گاہ کو فروخت کرنے پر پابندی عائد کی گئی ہے۔

عہدےدار کا کہنا تھا کہ سابق وزیراعظم کی رہائش گاہ پر یہ دونوں نوٹس جمعہ (22 ستمبر) کے روز جاتی امراء کا دورہ کرنے والے نیب حکام کی جانب سے چسپاں کیے گئے۔

انہوں نے بتاہا کہ نیب نے نواز شریف کے لیے جائیداد کی فروخت کے حوالے سے جاری کردہ نوٹس کی کاپیاں پنجاب ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن ڈپارٹمنٹ، لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی، ڈیفنس ہاؤسنگ اتھارٹی، سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان اور لاہور کے ڈپٹی کمشنر کو بھی بھجوائی ہیں۔

عہدےدار کے مطابق نیب کی جانب سے ان تمام محکموں کے سربراہان کو ہدایات دی گئی ہے کہ وہ ہر صورت عدالتی حکم پر عملدرآمد یقینی بنائیں۔

Facebook
Twitter
LinkedIn
Print
Email
WhatsApp

Never miss any important news. Subscribe to our newsletter.

مزید تحاریر

آئی بی سی فیس بک پرفالو کریں

تجزیے و تبصرے