’’ایسی فوج کی قیادت بڑے اعزاز کی بات ہے۔‘‘

نگہت نگار

اسلام آباد

image

آرمی چیف جنرل راحیل شریف گزشتہ روز شمالی و جنوبی وزیرستان کا دورہ کیا۔ اس دورے کے دوران انہوں نے علاقے میں جاری آپریشن کی پیش رفت کا جائزہ لینے کے علاوہ جوانوں سے ملاقات بھی کی۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے آرمی چیف نے قانون نافذ کرنے والے اداروں کو ملک بھر میں دہشت گردوں، ان کے سہولت کاروں، معاونت کاروں اور سرمایہ فراہم کرنے والوں کے خلاف انٹیلی جنس معلومات کی بنیاد پر آپریشنز جاری رکھنے کی ہدایت کی۔

انہوں نے کہا کہ ’’ ہم اس وقت تک آپریشن نہیں روکیں گے جب تک دہشت گردی سے پاک پاکستان کا مقصد حاصل نہ کر لیں۔‘‘ آرمی چیف نے شمالی وزیرستان میں پاک افغان سرحد پر اگلے مورچوں کا دورہ بھی کیا جہاں انہیں فارمیشن کمانڈر نے آپریشن ضرب عضب میں پیشرفت اور شوال کے علاقے میں دہشت گردوں کے باقی ماندہ ٹھکانوں کو کلیئر کرنے کے منصوبوں پر بریفنگ دی۔

جنرل راحیل شریف نے شوال کے علاقے میں سٹرٹیجک لحاظ سے اہم چوٹیوں کو کلیئر کرنے کے لیے آپریشن کے دوران فوجیوں کے پیشہ ورانہ قابلیت، قربانیوں اور بلند حوصلے کو سراہا۔

انہوں نے اس موقع پر کہا کہ ’’ایسی فوج کی قیادت بڑے اعزاز کی بات ہے۔‘‘ انہوں نے خصوصی ٹیموں کے کردار کو بھی سراہا جو ملک کے شہری علاقوں میں انٹیلی جنس معلومات پر آپریشنز کی ذمے دار ہیں۔

آرمی چیف نے جنوبی وزیرستان کے علاقے وانا کا بھی دورہ کیا جہاں انہیں آپریشن کے بعد جاری بحالی کے کاموں اور خطے کے لوگوں کو فراہم کی جانے والی امداد کے بارے میں آگاہ کیا گیا۔ جنرل راحیل شریف نے علاقے میں جاری متعدد چھوٹے اور بڑے منصوبوں کے لیے نمایاں اقدامات کی ستائش کی۔ اس موقع پر بات کرتے ہوئے انہوں نے آپریشن میں حاصل ہونے والی کامیابیوں کی اہمیت کو اجاگر کیا۔

Facebook
Twitter
LinkedIn
Print
Email
WhatsApp

Never miss any important news. Subscribe to our newsletter.

آئی بی سی فیس بک پرفالو کریں

تجزیے و تبصرے