ماڈل ایان علی پر کرنسی اسمگلنگ کیس میں فردجرم عائد

ayanکسٹم عدالت نے ماڈل ایان علی پر کرنسی اسمگلنگ کیس میں باقاعدہ طور پر فرد جرم عائد کردی ۔

ماڈل ایان علی کرنسی اسمگلنگ کیس میں اٹھارویں مرتبہ کسٹم عدالت میں پیش ہوئیں اس موقع پر ایک مرتبہ پھر ان کے وکیل  لطیف کھوسہ نے فرد جرم سے جان چھڑانے کیے لئے بھرپور کوشش کی لیکن عدالت نے کہا کہ پہلے فرد جرم اور بعد میں کسی درخواست پر سماعت ہوگی۔ عدالت نے ملزمہ پر فرد جرم عائد کرتے ہوئے کہا کہ ملزمہ نے 14 مارچ 2015 کو بے نظیر انٹرنیشنل ایئرپورٹ سے  6 لاکھ 6 ہزار 800 امریکی ڈالر اسمگل کرتے ہوئے گرفتار ہوئیں  تاہم ملزمہ نے صحت جرم سے صاف کردیا جس کے بعد عدالت نے آئندہ سماعت پر تمام 14 گواہاں کو طلب کرلیا۔

سماعت کے دوران ماڈل ایان علی کے وکیل لطیف کھوسہ  نے تین اعتراضات اٹھاتے ہوئے کہا کہ ماڈل کا پاسپورٹ واپس کرنے کی درخواست پر فیصلہ آنا ابھی باقی ہے جب کہ کسٹم حکام نے کیس میں ٹیمپرنگ کی اور ہائیکورٹ جب تک ماڈل کو بری کرنے کی درخواست پر فیصلہ نہیں سناتی اس وقت تک فرد جرم عائد نہیں ہوسکتی۔  اس موقع پر کسٹم کی تفتیشی ٹیم نے موقف اختیار کیا کہ اگر ماڈل کا پاسپورٹ واپس کیا گیا تو وہ بیرون ملک سے واپس نہیں آئیں گی اس لئے ان کی درخواست مسترد کی جائے جس کے بعد کسٹم عدالت نے لطیف کھوسہ کے تینوں اعتراضات مسترد کردیئے۔

واضح رہے کہ ماڈل ایان علی پر عائد الزامات ثابت ہونے کی صورت میں انہیں 5 سال سے لے کر 14 سال تک قید کی سزا ہوسکتی ہے۔

Facebook
Twitter
LinkedIn
Print
Email
WhatsApp

Never miss any important news. Subscribe to our newsletter.

آئی بی سی فیس بک پرفالو کریں

تجزیے و تبصرے