کراچی: سنی علما کونسل کے مرکزی رہنما مولانا عبدالقیوم نقشبندی فائرنگ سے قتل

کراچی: گلستان جوہر کے علاقے میں گھات لگائے نامعلوم مسلح ملزمان نے فائرنگ کرکے پاکستان علما ایسوسی ایشن کے رکن اورسنی علما کونسل کے مرکزی رہنما کوقتل کردیا۔

منگل کی علی الصبح گلستان جوہر تھانے کےعلاقے بلاک 9 مگسی چوک گلی نمبر3 میں موٹر سائیکل سوارنامعلوم مسلح ملزمان نے فائرنگ کرکے 50 سالہ مولانا عبدالقیوم صوفی نقشبندی کو قتل کردیا، جو جامع مسجد محمدی مدرسہ نورانی اسلامک سینٹرکے مہتمم، پاکستان علما ایسوسی ایشن کے رکن اورسنی علما کونسل کے مرکزی رہنما تھے۔

واقعے کی اطلاع ملنے پر پولیس ، رینجرز اورقانون نافذ کرنے والے اداروں کے افسران و جوان موقع پر پہنچے جب کہ شواہد اکٹھا کرنے کے لیے کرائم سین یونٹ کو طلب کیا گیا اور مقتول کی لاش پوسٹ مارٹم کے لیے جناح اسپتال پہنچائی گئی۔ پولیس کے مطابق مولانا عبدالقیوم صوفی نماز فجر کی ادائیگی کے بعد مسجد سے اپنے گھر کی جانب پیدل جا رہے تھے کہ گھر کے قریب ہی گھات لگائےموٹر سائیکل پر سوار 2 نامعلوم مسلح ملزمان نے انہیں فائرنگ کرکے قتل کردیا اورفرارہوگئے۔

مقتول مولانا عبدالقیوم کو ایک گولی سر پرلگی جو جان لیوا ثابت ہوئی۔مقتول 4 بچوں کے باپ تھے ۔ واقعے کے فوری بعد پاکستان علما ایسوسی ایشن اورسنی علما کونسل کے مرکزی رہنما، عہدیداران،مدرسے کے طلبہ اور علاقہ مکین بڑی تعداد میں موقع پر پہنچ گئے، جہاں انہوں نے احتجاج کیا۔

بعد ازاں قتل کے واقعے کی سی سی ٹی وی فوٹیج سامنے آگئی، جس میں دیکھا جا سکتا ہے کہ مسلح ملزمان مولانا عبدالقیوم صوفی کو قتل کرکے فرار ہو رہے ہیں۔مسلح افراد نے انتہائی قریب سے فائرنگ کر کے قتل کیا۔ ایک ملزم موٹر سائیکل سے اتر کر مولانا عبدالقیوم کے قریب آیا اور فائرنگ کی جب کہ دوسرا موٹر سائیکل پربیٹھا رہا۔ مسلح ملزم نے مولانا عبدالقیوم صوفی کے سرپرایک گولی ماری اورفرارہوگئے۔

Facebook
Twitter
LinkedIn
Print
Email
WhatsApp

Never miss any important news. Subscribe to our newsletter.

آئی بی سی فیس بک پرفالو کریں

تجزیے و تبصرے