چین کا 5 سال کے اندر چاند پر بیس کی تعمیر شروع کرنے کا منصوبہ

چین آئندہ 5 سال میں چاند پر ایک بیس (base) اسٹیشن تعمیر شروع کرنے کی منصوبہ بندی کررہا ہے۔

ساؤتھ چائنا مارننگ پوسٹ کی رپورٹ کے مطابق اس منصوبے سے منسلک سائنسدانوں نے بتایا کہ چاند کی سطح پر موجود گرد سے اینٹوں کی تیاری سے اس بیس کی تعمیر کا آغاز ہوگا۔

ہوانگزو یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کے سائنسدان Ding Lieyun نے بتایا کہ چاند کی گرد سے پہلی اینٹ کی تیاری 2028 میں چینگ ای 8 مشن کے دوران متوقع ہے۔

ماضی یہ رپورٹس سامنے آئی تھی کہ چاند پر چین کے بیس اسٹیشن کو جوہری توانائی سے چلایا جائے گا۔

البتہ ابھی یہ واضح نہیں کہ پوری بیس کو چاند کی سطح پر موجود گرد سے تعمیر کیا جائے گا یا صرف مخصوص حصوں کو۔

Ding Lieyun کے مطابق ‘بتدریج زمین سے باہر پناہ گاہوں کی تعمیر نہ صرف خلائی کھوج کے لیے ضروری ہوگی بلکہ ایک خلائی طاقت بننے کے لیے چین کو اس کی ضرورت بھی ہوگی’۔

واضح رہے کہ چین کی جانب سے چاند پر مشنز بھیجے گئے ہیں جبکہ اس نے اپنا اسپیس اسٹیشن بھی تعمیر کیا ہے اور مریخ پر مشن بھیجنے کی تیاری کر رہا ہے۔

چائنا ایرو اسپیس سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کارپوریشن کے سائنسدان Yu Dengyun نے چاند پر مستقبل قریب میں بھیجے جانے والے مشنز کی تفصیلات بھی بتائیں۔

ان کے مطابق 2025 میں چینگ ای 6 مشن کو چاند پر بھیجا جائے گا جو وہاں کے دور دراز کے حصوں سے نمونے اکٹھے کرے گا۔

اس کے بعد 2026 چینگ ای 7 مشن بھیجا جائے گا جو چاند پر برفانی پانی کو تلاش کرے گا جبکہ چینگ ای 8 مشن 2028 میں روانہ کیا جائے گا۔

Facebook
Twitter
LinkedIn
Print
Email
WhatsApp

Never miss any important news. Subscribe to our newsletter.

آئی بی سی فیس بک پرفالو کریں

تجزیے و تبصرے