صدر، وزیراعظم، ججز، وزراء و بیوروکریٹس کی مراعات کی تفصیلات طلب

اسلام آباد: پبلک اکاؤنٹس کمیٹی (پی اے سی) نے آڈیٹر جنرل سے صدر، وزیراعظم، ججز، وزراء اور بیوروکریٹس کو ملنے والی مراعات کی تفصیلات طلب کر لیں۔

چیئرمین پی اے سی نور عالم خان کی زیر صدارت اجلاس ہوا جس میں پی اے سی نے ایف آئی اے کو حیسکول اور بائیکو کے ڈائریکٹرز کے نام آی سی ایل میں ڈالنے کی ہدایت کر دی۔

اجلاس میں آڈیٹر جنرل نے پی اے سی کو آگاہ کیا کہ صدر، وزیراعظم، ججز اور بیوروکریٹس کو ملنے والی مراعات کی تفصیلات تیار کرلی ہیں۔

رکن کمیٹی نزہت پٹھان نے کہا کہ جنرلز اور سپاہی کی تنخواہوں کی تفصیلات بتائی جائیں جبکہ اراکین کمیٹٰی نے کہا کہ جنرلز اور سپاہی کی تنخواہوں اور مراعات بتاتے ہوئے پر جلتے ہیں، اس معاملے پر میڈیا کے بھی بات کرنے پر پَر جلتے ہیں۔

آڈٹ حکام نے بتایا کہ پیٹرولیم ڈویژن کو جی آئی ڈی سی کے کل 322 ارب روپے کے واجبات میں سے 208 ارب روپے مل چکے ہیں۔ چیئرمین پی اے سی نے کہا کہ وزارت خزانہ سے 120 ارب روپے حاصل کرنے کے لیے خط لکھیں، یہ بتائیں بائیکو پیٹرولیم سے 42 ارب روپے کی ریکوری کا کیا بنا۔

ایف آئی اے حکام ن بتایا کہ ایف آئی اے نے 3.9 ارب روپے کی ریکوری کی ہے اور باقی رقم کی ادائیگی کے لیے بات چیت جاری ہے۔ نور عالم خان نے کہا کہ ایف آئی اے یقینی بنائے کہ آج ہی حیسکول اور بائیکو کے ڈائریکٹرز کے نام ای سی ایل میں ڈال دیے جائیں۔

وزارت پیٹرولیم حکام نے بتایا کہ پیٹرولیم سیکٹر کے گردشی قرضے 1.7 ٹریلین روپے ہیں۔

Facebook
Twitter
LinkedIn
Print
Email
WhatsApp

Never miss any important news. Subscribe to our newsletter.

آئی بی سی فیس بک پرفالو کریں

تجزیے و تبصرے