سعودی عرب پاکستان میں 1900مکانات ،33سکول اور23 مراکز صحت تعمیرکرے گا۔

ریاض.سعودی عرب پاکستان میں زلزلے اور سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں 1900مکانات ،33 سکول اور23 مراکز صحت تعمیر کرے گا – مکانات صوبہ بلوچستان اور گلگت بلتستان جبکہ سکول اور مراکز صحت سندھ ،بلوچستان ،خیبر پختونخوا اور آزاد کشمیر میں تعمیر کئے جائیں گے ۔

سعودی گزٹ کے مطابق پاکستانی عوام کی امداد کے لئے سعودی مہم کے ریجنل ڈائریکٹر ڈاکٹر خالد محمد آل عثمانی نے بتایا ہے کہ ‘زلزلے سے متاثرہ اڑتالیس مساجد کی تعمیرنو کی جائے گی اور پینے کے صاف پانی کی فراہمی کے لئے بھی متعددمنصوبوں پر کام کیا جائے گا -واضح رہے کہ پاکستان میں اکتوبر 2005ءمیں 7.6کی شدت کا شدید زلزلہ آیا تھا جس کے نتیجے میں 75 ہزار افراد جاں بحق ‘ ایک لاکھ 28 ہزار زخمی اور 35 لاکھ سے زیادہ بے گھر ہوگئے تھے۔آل عثمانی نے بتایا کہ ہم ہسپتالوں،مکانوں،مراکزصحت ،یتیم خانوں اور پینے کے پانی کی سہولت مہیا کرنے کے لئے ایک مربوط امدادی پروگرام پر عمل درآمد کر رہے ہیں اور اس مہم کے تحت زلزلے سے متاثرہ علاقوں میں تعمیر نو کے کام کئے جا رہے ہیں ۔ایمرجنسی ریلیف پروگرام کے خدوخال بیان کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ ”اس کے تحت قدرتی آفات سے متاثرین کو خوراک ،کپڑے ،شیلٹر ، پینے کا پانی ،زراعت کے لیے مدد ،گلہ بانی ،تعلیم اور پیشہ ورانہ تعلیم اور صحت کے مراکز تعمیر کیے جاتے ہیں۔طبی مراکز کو ڈاکٹری آلات بھی مہیا کیے جاتے ہیں اور مساجد کی تعمیرنو اورتزئین وآرائش کی جاتی ہے۔

پاکستان میں جولائی 2010ءمیں شدید سیلاب آیا تھا۔اس کے نتیجے میں ڈھائی کروڑ افراد متاثر ہوئے تھے اور سعودی عرب نے متاثرین کی مدد اور بحالی کے لیے ایک ملک گیر چندہ مہم شروع کی گئی تھی۔اس کے بعد کے برسوں میں بھی پاکستان میں تباہ کن سیلاب آئے تھے۔

Facebook
Twitter
LinkedIn
Print
Email
WhatsApp

Never miss any important news. Subscribe to our newsletter.

آئی بی سی فیس بک پرفالو کریں

تجزیے و تبصرے