ڈاکٹر عظمیٰ اور پروٹوکول کلچر

کہانی کھل گئی،عمران خان کی بہن ڈاکٹر عظمی کے ساتھ بدتمیزی کس نے کی؟لاہور کے علاقے گلبرگ میں پروٹوکول کس کے گھر لگا تھا؟مریم نواز تھیں یاکوئی اور؟

ڈاکٹر عظمیٰ نے کہا کہ گلبرگ کے علاقے میں پولیس کی ایک گاڑی نے روکا، دوسری نے ٹکر ماری ، اسلحہ بردار اہلکاروں نے مجھ پر اور بچوں پر بندوقیں تان لیں،کہا چلی جاؤ، یہاں سے چلی جاؤ کا شور مچاتے رہے، پتہ کیا تو مریم نواز کا پروٹوکول نکلا،کس سے انصاف مانگوں، کہاں مقدمہ درج کراؤں؟

لاہور میں عمران خان کے بہن ڈاکٹر عظمیٰ کے ساتھ بدتمیزی کس نے کی، گلبرگ تھری کے علاقے میں کس کا پروٹوکول تھا،پروٹوکول مریم نواز کا تھا کہ یا کسی اور کا،جیو نیوز نے پتہ لگایا تو ساری کہانی کھل کر سامنے آگئی۔

ذرائع کے مطابق وی آئی پی پروٹوکول آزاد کشمیر کے صدر سردار یعقوب چوہدری کا تھا،جو چوہدری عاصم کے گھر ان کی والدہ کے انتقال پر تعزیت کے لیے پہنچے تھے،اسی وی آئی پی پروٹوکول کے اہلکار تھے ،جنہوں نے ڈاکٹر عظمیٰ کے ساتھ مبینہ بدتمیزی کی۔

ڈاکٹر عظمیٰ نے بتایا کہ لاہور کے علاقے گلبرگ تھری میں ایک مکان کے سامنے پروٹوکول کے اہلکاروں نے پہلے ان کی گاڑی کو زبر دستی روکا اور سائڈ پر ہونے کا حکم سنایا گیا،غصے سے نڈھال ڈاکٹر عظمی نے کہا کہ گاڑی سائیڈ پر کرنے کے باوجود سامنے سے آنے والی ایک دوسری سیاہ گاڑی نے اووراسپیڈنگ کے ساتھ ان کی کار کو نہ صرف ہٹ کیا بلکہ پولیس اہلکاروں نے ان پر اسلحہ بھی تان لیا۔

ڈاکٹر عظمیٰ نے کہا کہ جب انہوں نے گھر کے مکینوں سے اس بارے میں پوچھا تو پہلے ان کو نقصان پورا کرنے کی تاویلیں پیش کی گئیں،اصرار کیا تو پتہ چلا کہ یہ مریم نواز کا پروٹوکول تھا جو وہاں کسی تعزیت کے لیے آئی تھیں۔

ڈاکٹر عظمیٰ کو جس اذیت سے گزرنا پڑا جو ان کے اوپر گزری وہ وی آئی پی کلچر کے نام پر ہر پاکستانی پر گزرتی ہے، چاہے کراچی ہو یا لاہور پشاور ہویا کوئٹہ،وی آئی پیز کے نام پر عوامی نمائندے اور ان کے محافظ اسی عوام کی عزت نفس کو کچلتے ہیں جس نے ان کو پلکوں پر بٹھا کر ایوانوں میں بھیجا ہوتا ہے۔

Facebook
Twitter
LinkedIn
Print
Email
WhatsApp

Never miss any important news. Subscribe to our newsletter.

آئی بی سی فیس بک پرفالو کریں

تجزیے و تبصرے