ہند کے مولوی صاحبان

ہندوستانی ذریعہ تعلیم اور سینما نے ہندوستانی قوم پرستی کو اس قدر مظبوط کیا ہوا ہے کہ وہاں کے مسلمان کی سوچ پر بڑے سے بڑے دارالعلوم کی تعلیم بھی کوئی اثر نہیں چھوڑتی …. رفتہ رفتہ وہاں کا مسلمان ذہنی طور پر ایک "محمدی مسلمان” کی بجائے ایک ہندوستانی قوم پرست مسلمان بنتا جارہا ہے … وہ پاکستان کو اور باقی امہ کو اسی نظر سے دیکھتا ہے جیسا کہ ہندو قوم پرست یا ہندوستانی میڈیا اسے دکھاتے ہیں…. اسے بھی پاکستان اتنا ہی زہر لگتا ہے جتنا ایک بی جے پی یا شیو سینا کے کارکن کو ….اسے بھی کشمیر میں آزادی کی جنگ دہشت گردی لگتی ہے …اس کے اندر سے اسلام کی حقیقی روح ، مسلم امہ کا احساس سب کچھ ختم ہوتا جارہا ہے …..

حالیہ دنوں میں کشمیر میں مسلمانوں پر ظلم کی انتہا کردی گئی …. سینکڑوں کی تعداد میں شہادتیں ہوئیں… لوگوں کو چھرے والی بندوق سے نابینا کردیا گیا … کشمیر کے رہنماؤں کو جن میں بوڑھے علی گیلانی بھی شامل ہیں پابند_سلاسل رکھا گیا…… وہاں بنگلہ دیش میں اسی اور نوے سال کے بوڑھوں کو پھانسیاں دی گئیں … پاکستان میں انڈیا کی پروردہ تحریک طالبان پاکستان نے جو خون خرابہ کیا … پشاور میں اسکول کے معصوم بچوں تک کو نہیں بخشا گیا … ساری دنیا جانتی ہے کہ اب تک بھارت اور امریکہ کی آشیرواد سے پاکستان میں پچاس ہزار بے گناہ مسلمان مارے جاچکے ہیں ….مگر کسی ہندوستانی عالم کا کوئی ایک مذمتی بیان دکھا دیجئے … یہ دارالعلوم دیو بند …. یہ جمیعت علمائے ہند …. یہ جماعت اسلامی ہند …. کہیں سے کوئی ایک مذمت …ایک بھی نہیں …….

ان علمائے کرام میں اتنی تو اخلاقی جرات ہونی چاہئیے کہ اپنی مودی کی حکومت سے پوچھیں کہ یہ تم کشمیر میں کیا کر رہے ہو … کیوں لوگوں کو چھرے مار کے اندھا کر رہے ہو … کیوں تم نے دو مہینے سے وہاں کرفیو لگاکے لوگوں کی زندگی اجیرن کی ہوئی ہے … کیوں تم پاکستان میں دہشت گردی کے ذریعے ہمارے مسلمان بھائیوں کو مار رہے ہو …. کوئی ایک آواز نہیں پورے ہندوستان سے کسی ایک مولوی کی …. ان سے اچھے تو ہیومن رائٹس کمشن سے وابستہ وہ ہندو اور عیسائی ہیں جو کم از کم زبانی جمع خرچ تو کرتے ہیں…. اگر ہندوستان بھر کے مولوی صاحبان مل کے ایک بیان دے دیں تو مجال ہے بی جے پی سرکار کی کہ وہ یہ ظلم رواں رکھ سکے .

لیکن ہمیں ان ہندوستانی مولوی صاحبان سے شکوہ بھی نہیں ہونا چاہئیے … ان کی مجبوری اور مفاد اسی میں ہے …. ان کو اپنے اداروں کے لئے فنڈ اور چندہ انہی بی جے پی اور کانگریس کی حکومتوں سے لینا ہوتا ہے …. چاہے وہ بابری مسجد کو تہس نہس کردیں…. گائے کے گوشت کھانے کے بہانے سڑک پر عورتوں اور نوجوانوں کو گھسیٹیں … مار مار کے لہو لہان کر دیں … ہند کے مولوی نے اپنی آنکھیں اور زبان بند رکھنا ہے …. ورنہ فنڈ بند ہوجائے گا……

کیا خوب میرے آقائے نامدار نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کا فرمان ہے کہ میری امّت کی کمزوری مال ہے…. اور آج ہم دیکھتے ہیں کہ اس مال کی چمک دین سے وابستہ لوگوں میں عام آدمی سے زیادہ ہے.

"بیچ کھاتے ہیں جو اسلاف کے مدفن تم ہو”

Facebook
Twitter
LinkedIn
Print
Email
WhatsApp

Never miss any important news. Subscribe to our newsletter.

مزید تحاریر

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

تجزیے و تبصرے