راولپنڈی میں بچی ریپ کے بعد قتل، 2 ملزمان گرفتار

راولپنڈی کے علاقے اسماعیل آباد سے 10 سالہ بچی کو اغوا کرکے جنسی زیادتی کے بعد قتل کرنے والے دو ملزمان کو گرفتار کرلیا گیا۔

تھانہ صدر واہ کے علاقے اسماعیل آباد سے دو دن قبل 10 سالہ طالبہ عائشہ پروین کو پڑوسی سمیت دو ملزمان نے اغوا کرلیا تھا۔

ملزمان تیمور اور کامران نے بچی کو اپنی ہوس کا نشانہ بنایا اور بچی کے اہلخانہ کو بتانے کے خوف سے اس کا گلہ دبا کر قتل کرنے کے بعد لاش کو قریبی پُل کے نیچے پھینک کر فرار ہوگئے۔

تھانہ صدر واہ کے ایس ایچ او یاسر کیانی کا کہنا تھا جرم کے بعد ملزمان واپس اپنے گھروں کو چلے گئے اور مقتولہ کے اہل خانہ کے ساتھ مل کر بچی کو تلاش کرنے لگ گئے۔

اس دوران محلے کے کسی شخص نے راز کھول دیا کہ عائشہ کو محلہ دار کامران ساتھ لے کر گیا، جس پر پولیس نے ملزم کو حراست میں لیا تو اس نے اپنے جرم کا اعتراف کرلیا۔

ملزم نے اپنے اعترافی بیان میں کہا کہ جرم میں اس کے ساتھ تیمور حسین بھی شامل ہے۔

یاسر کیانی نے کہا کہ کامران کے بیان کے بعد تیمور کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے گئے اور اسے ہری پور کے علاقے جنڈیال سے گرفتار کیا گیا، جبکہ بچی کی لاش برآمد کرلی گئی۔

دونوں ملزمان کے خلاف مقتولہ کے بھائی کی مدعیت میں مقدمہ درج کر لیا گیا ہے، ملزمان سے مزید تفتیش کی جا رہی ہے۔

Facebook
Twitter
LinkedIn
Print
Email
WhatsApp

Never miss any important news. Subscribe to our newsletter.

آئی بی سی فیس بک پرفالو کریں

تجزیے و تبصرے