پنجاب یونیورسٹی کی زمین کے تنازعے پر وائس چانسلر مستعفی

لاہور: پنجاب یونیورسٹی کے وائس چانسلر ڈاکٹر ظفر معین نصر نے پنجاب حکومت کی جانب سے مذہبی جماعت کو جامعہ کی زمین دینے کے معاملے پر احتجاجاً استعفیٰ دے دیا ہے۔

ڈاکٹر ظفر معین نے گورنر پنجاب ملک محمد رفیق رجوانہ کو ارسال کیے گئے استعفے میں ‘ناگزیر حالات’ کو جواز بنایا ہے۔

ڈاکٹر ظفر معین نے ڈان کو بتایا کہ ‘انہوں نے حکومت پنجاب کے بعض عناصر کی جانب سے پنجاب یونیورسٹی کے اولڈ کیمپس کی دو کنال اراضی کو مذہبی جماعت کو حوالے کرنے پر شدید دباؤ کے بعد استعفیٰ دیا۔

ڈاکٹر ظفر معین ناصر ، وائس چانسلر پنجاب یونیورسٹی

ان کا کہنا تھا کہ ‘جامعہ کے تمام اساتذہ زمین کو حکومت کے حوالے کرنے پر سخت مخالف ہیں اس لیے دباؤ قبول کرنے کے بجائے استعفیٰ دے دیا’۔

واضح رہے کہ پنجاب حکومت نے اورنج لائن ٹرین پروجیکٹ کی وجہ سے مدرسے کی زمین حاصل کی تھی اور متبادل کے طور پر یونیورسٹی کی زمین ایک سیاسی و مذہیبی جماعت کو دینے پر دباؤ ڈال رہی تھی۔

اس سےقبل وزیر اعلی پنجاب کے مشیر خاص اور چیئرمین لاہور ٹرانسپورٹ کمپنی خواجہ احمد احسان نے پنجاب یونیورسٹی کے وائس چانسلر، ڈینزاور دیگر سے ملاقات میں زور دیا تھا کہ زمین کو بغیر کسی تاخیر کے حکومت کے حوالے کردی جائے۔

مذکورہ ملاقات سے ایک ہفتے قبل ڈاکٹر ظفر معین کی سربراہی میں منعقد اجلاس میں مشترکہ مطالبہ کیا گیا تھا کہ وزیراعلیٰ شہباز شریف پنجاب یونیورسٹی کی زمین ہتیھانے کے بجائے لیک روڈ پر قائم سرکاری دفاتر کے پاس مدرسے کے لیے زمین فراہم کریں۔

Facebook
Twitter
LinkedIn
Print
Email
WhatsApp

Never miss any important news. Subscribe to our newsletter.

مزید تحاریر

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

تجزیے و تبصرے