پرویز خٹک کی مقتولہ لڑکی کے اہل خانہ سے ملاقات، مدد کی یقین دہانی

پشاور: وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک نے مردان میں ریپ کے بعد قتل کی جانے والی مقتولہ کے اہل خانہ سے ملاقات کرکے ملزمان کی جلد گرفتاری کی یقین دہانی کرادی۔

وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک نے انسپکٹر جنرل (آئی جی) پولیس صلاح الدین محسود کے ہمراہ عاصمہ کے گھر جا کر ان کی اہل خانہ سے ملاقات اور تعزیت کی۔

خیال رہے کہ 3 سالہ لڑکی کو مردان کے علاقے گجر گراہائی میں 6 روز قبل ریپ کے بعد قتل کردیا گیا تھا۔

وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا نے متاثرہ خاندان کو یقین دہانی کرائی کہ انہیں ہر قسم کی مدد فراہم کی جائے گی اور ملزمان کو جلد گرفتار کر لیا جائے گا۔

علاوہ ازیں ضلعی ناظم حمایت اللہ نے مذکورہ واقعے پر آل پارٹیز کانفرنس (اے پی سی) طلب کرنے کا مطالبہ کیا۔

انہوں نے مطالبہ کیا کہ انتظامیہ مقدمے میں ریپ اور دہشت گردی کی دفعات شامل کرے اور ملزمان کو فوری گرفتار کیا جائے۔

دوسری جانب علاقے میں عمائدین کے ہونے والے جرگے نے حکومت کو ملزمان کی گرفتاری کے لیے 72 گھنٹے کا وقت دیا ہے۔

پولیس حکام کے مطابق واقعے کے بعد 25 مشتبہ افراد کو گرفتار کیا گیا ہے جبکہ اصل ملزم کو جلد گرفتار کرلیا جائے گا۔

خیال رہے کہ گزشتہ ہفتے مردان میں 3 سالہ لڑکی کو ریپ کے بعد قتل کیا گیا تھا، جس کے بعد اس واقعے کی تحقیقات کے لیے ریجنل پولیس افسر مردان کی سربراہی میں 8 رکنی کمیٹی تشکیل دی گئی تھی۔

اس واقعے کے حوالے سے گزشتہ دنوں آئی جی خیبرپختونخوا نے بتایا تھا کہ بچی کی میڈیکو لیگل رپورٹ کے مطابق بچی کو گلا دبا کر قتل کیا گیا جبکہ رپورٹ میں بچی سے جنسی زیادتی کی بھی نشاندہی کی گئی۔

واضح رہے کہ ملک میں گزشتہ کچھ عرصے کے دوران بچوں سے جنسی زیادتی کے واقعات میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔

تاہم قصور میں چھ سالہ بچی زینب کے ریپ اور قتل کے واقعے نے پورے ملک کو جنجھوڑ کر رکھ دیا تھا، جس کی لاش گزشتہ ہفتے کچرے کے ڈھیر سے ملی تھی۔

Facebook
Twitter
LinkedIn
Print
Email
WhatsApp

Never miss any important news. Subscribe to our newsletter.

آئی بی سی فیس بک پرفالو کریں

تجزیے و تبصرے