مجھے پاکستان کو ایٹمی طاقت بنانے کے جرم میں نکالا گیا، نواز شریف

شیخوپورہ: سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ (ن) کے صدر نواز شریف کا کہنا تھا کہ مجھے پاکستان کو ایٹمی طاقت بنانے کے جرم میں نکالا ہے۔

شیخوپورہ میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے نواز شریف کا کہنا تھا کہ پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) اور پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) سے سوال کیا جائے کہ انہوں نے کیا کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ کراچی اور پشاور میں سڑکیں ٹوٹی پھوٹی ہیں اور ان شہروں کی حالتِ زار ہے، جبکہ شہباز شریف نے لاہور کو پاکستان کا خوبصورت ترین شہر بنادیا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ میں آپ کے ساتھ مل کر وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کو مثالی کام کرنے پر خراجِ تحسین پیش کرتا ہوں۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ اگر عوام ملک میں بجلی، پانی، تعلیم اور صحت کی سہولیات چاہتے ہیں تو انہیں ووٹ کے تقدس کی حفاظت کرنی ہوگی۔

نواز شریف نے اپنے ہاتھ میں 10، 50، 100، 1000 اور 5000 روپے کے نوٹ ہاتھ میں اٹھاتے ہوئے کہا کہ کوئی یہ ثابت کردے کہ میں نے کبھی اتنے روپے کی رشوت لی۔

[pullquote]پاکستان کی ترقی کے لئے کام کرنے پر مجھے نکالا گیا، نواز شریف[/pullquote]

شیخوپورہ کے کمپنی گراؤنڈ میں عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے نواز شریف نے کہا کہ ہم نے ملک سے دہشت گردی کا خاتمہ کیا، ملک میں غیرملکی سرمایہ کاری لے کر آئے۔

جلسے کا پنڈال دو گراؤنڈز میں بنایا گیا ہے جب کہ شہر کی سڑکوں پر سابق وزیراعظم نواز شریف اور مریم نواز کے خیر مقدمی بینرز بھی آویزاں کیے گئے ہیں۔

مریم نواز نے اپنے خطاب کے دوران کہا کہ ہمارا نظام عدل ہر اس شخص کا مقروض ہے جس نے ووٹ ڈالا، نواز شریف کے ساتھ ہونے والے مظالم کے قرض کون چکائے گا۔

سابق وزیراعظم کی صاحبزادی نے کہا کہ کیا پاکستان کا اسی طرح تماشا بنتا رہے گا، کیا اس ناانصافی کے خلاف آپ کچھ کریں گے، نواز شریف کو گالی دینے والے منصفوں نے ہی ان کا فیصلہ سنانا ہوگا، نواز شریف کو عوام کی محبت اور عشق کی سزا ملتی ہے۔

مریم نواز نے مزید کہا کہ مائنس نواز شریف کے فارمولے پر کام کرنے والوں کو ناکامی ہوئی، نواز شریف کو بدلے میں عوام کی محبت اور عشق ملا اور وہ وقت آرہا ہے جب آئینی اور قانونی جے آئی ٹی بنے گی۔

سابق وزیراعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز کی تاج پوشی کے لیے انجمن تاجران شیخوپورہ کی جانب سے پانچ تولہ سونے کا خصوصی تاج بھی بنوایا گیا ہے۔

ڈی پی او شیخوپورہ کے مطابق مسلم لیگ (ن) کے جلسے کی سیکیورٹی کے لئے پولیس کے 1800 اہلکار تعینات ہیں جن میں 1500 اہلکار جلسہ گاہ اور اطراف جب کہ 300 اہلکار مختلف راستوں پر تعینات کیے گئے ہیں۔

Facebook
Twitter
LinkedIn
Print
Email
WhatsApp

Never miss any important news. Subscribe to our newsletter.

آئی بی سی فیس بک پرفالو کریں

تجزیے و تبصرے