سکھر میں کھجور گودام کی چھت گرنے سے 9 مزدور جاں بحق

سکھر کے قریب کھجور منڈی گودام کی چھت گرنے سے 9 مزدور جاں بحق ہوگئے ہیں جبکہ 13 افراد کو زخمی حالت میں نکال لیا گیا۔

ڈپٹی کمشنر سکھر رحیم بخش کے مطابق مرنے والوں میں چار خواتین اور دو بچے شامل ہیں جبکہ ریسکیو کارروائی جاری ہے۔

‎‏کمشنر سکھر ڈاکٹر عثمان چاچڑ نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ گودام کو ایک ماہ قبل سیل کیا گیا تھا اور اسے غیر قانونی طور پر دوبارہ کھولا گیا۔

‎‏ڈاکٹر عثمان چاچڑ نے کہا کہ اگر گودام کو دوبارہ کھولنے میں سرکاری اہلکار ملوث ہوئے تو کارروائی ہوگی۔

کمشنر سکھر کے مطابق گودام مالکان اور گودام کا منشی فرار ہوگئے ہیں، مرنے والے محنت کشوں کو معاوضہ دلانے کی سفارش کریں گے۔

اس مقام پر غیر قانونی طور پر چھوہارا بھٹی چلائی جارہی تھی۔

انہوں نے بتایا کہ چھوہارا پکانے کے دوران استعمال ہونے والے کیمیکل کی گیس بھٹی میں بھرگئی جس سے دھماکا ہوگیا اور بھٹی کی چھت گرگئی۔

ان کے مطابق دھماکے کے وقت بھٹی میں تقریباً 60 کے قریب محنت کش کام کررہے تھے جو ملبے تلے دب گئے۔

فوج اور رینجرز کے جوان بھی امدادی کاموں میں حصہ لینے پہنچ گئے۔ مزید افراد کے ملبے میں دبے ہونے کا خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے۔

[pullquote]گورنر سندھ کا نوٹس[/pullquote]

دوسری جانب گورنر سندھ محمد زبیر نے کھجور مارکیٹ سکھر میں چھت گرنے کے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے کمشنر سکھر سے اس کی رپورٹ طلب کرلی ہے۔

انہوں نے واقعے میں قیمتی انسانی جانوں کے ضیاع پر اظہار افسوس کرتے ہوئے زخمیوں کو بہترین طبی امداد فراہم کرنے کی ہدایت کردی۔

Facebook
Twitter
LinkedIn
Print
Email
WhatsApp

Never miss any important news. Subscribe to our newsletter.

آئی بی سی فیس بک پرفالو کریں

تجزیے و تبصرے