غلام علی کا زندگی بھر ہندوستان نہ جانے کا اعلان

ghulamپاکستان کے نامور غزل گائیک غلام علی نے زندگی بھر ہندوستان میں پرفارم نہ کرنے کا اعلان کردیا.

ہندوستانی نیوز چینل سی این این آئی بی این (CNN-IBN) کی ایک ر
پورٹ کے مطابق غلام علی کا کہنا تھا کہ انھوں نے ہندوستان میں مستقبل کے سارے کنسرٹ اور پروگرام منسوخ کردیئے ہیں اور وہ کبھی ہندوستان نہیں آئیں گے۔

غلام علی کا کہنا تھا کہ وہ سیاسی مقاصد کے لیے کیے جانے والے سلوک سے مایوس ہیں۔

گذشتہ روز غلام علی نے ہندوستان میں شدت پسندی کی حالیہ لہر کے پیش نظر 8 نومبر کو دہلی میں ہونے والا کنسرٹ منسوخ کردیا تھا.

بولی وڈ لائف کی ایک رپورٹ کے مطابق غلام علی نے ذاتی وجوہات کی بنا پر ایونٹ منسوخ کیا۔ تاہم، ان کے بیٹے عامر کا کہنا تھا کہ ان کے والد ہندوستان میں موجودہ حالات پر کافی محتاط اور حالات کے بہتر ہونے کا انتظار کر رہے ہیں۔

غلام علی کٹر ہندو تنظیم شیو سینا کی دھمکیوں کے باعث ممبئی میں اپنا کنسرٹ نہ ہونے کی وجہ سے ایک ماہ سے خبروں کی سرخیوں میں ہیں۔

اس سے قبل شیو سینا کی دھمکیوں کے بعد غلام علی کا 9 اکتوبر کو ممبئی میں ہونے والا کنسرٹ بھی منسوخ کر دیا گیا تھا. شدت پسند ہندو تنظیم کا کہنا تھا کہ "ایسے میں جب ہمارے فوجی مر رہے ہوں، ہم پاکستان کے ساتھ ثقافتی تعلقات نہیں رکھ سکتے”۔

مبئی میں کنسرٹ منسوخ کیے جانے کے بعد دہلی حکومت نے انھیں وفاقی دارالحکومت میں پرفارمنس کے لیے مدعو کیا تھا. عام آدمی پارٹی سے تعلق رکھنے والے نئی دہلی کے وزیر ثقافت کپل مشرا نے غلام حسین کو مدعو کرتے ہوئے کہا ہے کہ "موسیقی کی کوئی سرحد نہیں ہوتی”.

جس پر غلام علی کا کہنا تھا کہ جہاں بھی انھیں محبت سے بلایا جائے گا، وہ ضرور جائیں گے اور پرفارم کریں گے.

خیال رہے کہ اپریل میں بھی لیجنڈری غلام علی نے ہندوستانی وزیر اعظم نریندر مودی کے حلقے واراناسی کے مشہور سنکت موچن مندر میں موسیقی کی محفل منعقد کی تھی، اس محفل کے لیے مودی کو بھی دعوت نامہ بھیجا گیا تھا لیکن انہوں نے اپنی مصروفیت کی وجہ سے اس میں شرکت سے معذرت کر لی تھی۔

اُسی مہینے پاکستان کے پاپ گلوکار عاطف اسلم کو شیو سینا کی جانب سے دھمکیاں ملنے کے بعد انھوں نے پونے میں اپنا کنسرٹ منسوخ کر دیا تھا. اس کنسرٹ کے ہزاروں ٹکٹ فروخت ہو چکے تھے لیکن منتظمین کو پیسے ری فنڈ کرنا پڑے۔

شیو سینا کی جانب سے پاکستانی فنکاروں اور کھلاڑیوں کو بھی دھمکیاں دی گئی ہیں.

انتہا پسند تنظیم نے پاکستانی فنکاروں ماہرہ اور فواد خان کی آنے والی فلموں ‘رئیس’ اور ‘اے دل ہے مشکل’ کی پروموشن کی اجازت نہ دینے کی دھمکی دی تھی۔

شیو سینا کے فلم ونگ چترا پتا سینا کے جنرل سیکریٹری اکشے برداپرکر کا کہنا تھا کہ، "ہم ہندوستانی ریاست مہاراشٹر کی سر زمین پر کسی پاکستانی اداکار، کرکٹر یا فنکار کو نہیں آنے دیں گے”.

Facebook
Twitter
LinkedIn
Print
Email
WhatsApp

Never miss any important news. Subscribe to our newsletter.

آئی بی سی فیس بک پرفالو کریں

تجزیے و تبصرے