تاریخ میں مقبوضہ کشمیر جیسے بلیک آؤٹ کی مثال نہیں ملتی: وزیر خارجہ

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ تاریخ میں ایسے بلیک آؤٹ کی مثال نہیں ملتی جیسا مقبوضہ کشمیر میں ہے۔

کراچی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں نہتے لوگوں کو نشانہ بنایا جا رہا ہے، نوجوانوں کو گرفتار کرکے ان پر تشدد کیا جا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم نے اسلامک کمیونٹی فار نارتھ امریکا سے درخواست کی کہ وہاں کے لوگ کشمیریوں کے حق کے لیے آواز بلند کریں۔

ان کا کہنا ہے کہ کشمیریوں کے ساتھ ناانصافی اور ظلم ہو رہا ہے، مقبوضہ وادی میں کشمیریوں کے حقوق پامال ہو رہے ہیں، آج ہٹلر کی سوچ مودی کی صورت میں برصغیر پر مسلط کی جا رہی ہے، ہر کسی کو ظلم کے خلاف آواز اٹھانی چاہیے۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ تاریخ میں ایسے بلیک آؤٹ کی مثال نہیں ملتی جیسا مقبوضہ کشمیر میں کیا گیا، بھارت خود کو جمہوری ملک کہتا ہے لیکن وہاں میڈیا پر شدید پابندی ہے۔

ایک سوال کے جواب میں شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ خلیجی ممالک ہمارے ساتھ کھڑے ہیں اور کھڑے ہوں گے، وقت ثابت کرے گا کہ خلیجی ممالک ہمارے ساتھ کھڑے ہیں۔

کشمیر کے معاملے پر اپوزیشن کے کرداری کے حوالے سے بات کرتے ہوئے شاہ محمود قریشی نے کہا کہ اپوزیشن نے اسمبلی کی حد تک ہماری قرارداد پر ساتھ دیا، اگر ریلی میں اپوزیشن کا چہرہ دکھائی دیتا تو کشمیریوں کو اچھا پیغام جاتا، اپوزیشن اگر کشمیر آور میں شرکت نہ کر سکی تو آئندہ ریلیوں میں شرکت کرے۔

بھارت کے لیے پاکستانی فضائی حدود بند کرنے کے حوالے سے وزیر خارجہ نے کہا کہ فضائی حدود کی پابندی زیر غور ہے، حکومتی فیصلے ایسے نہیں ہوتے بلکہ اس کے مثبت اور منفی نتائج دیکھ کر فیصلہ کیا جاتا ہے، فیصلہ وزیراعظم مناسب وقت پر کریں گے۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ کشمیر کے مسئلے کا کرپشن سے کوئی تعلق نہیں ہے، کشمیر سیل اپنی تجاویز مرتب کرے گا جس پر عملدرآمد کریں گے۔

انہوں نے بتایا کہ وزیراعظم امریکا جائیں گے جہاں وہ مختلف ممالک کے سربراہان سے ملاقات کریں گے، وزیراعظم 27 ستمبر کو کشمیریوں کا مقدمہ اقوام متحدہ میں سب کے سامنے پیش کریں گے۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ اگلے مرحلے میں سلامتی کونسل، یورپی پارلیمنٹ میں جائیں گے اور جنیوا میں ہیومن رائٹس کمیشن کے سامنے کشمیر کا معاملہ رکھیں گے۔

ان کا کہنا ہے کہ بھارت جہاں گیا اسے منہ کی کھانی پڑی ہے جب کہ کئی ممالک کشمیر کے معاملے پر ہمارے ساتھ کھڑے ہیں۔

پاک بھارت جنگ کے حوالے سے پوچھے گئے سوال پر شاہ محمود قریشی نے کہا کہ کوئی باشعور شخص جنگ کی خواہش نہیں کر سکتا لیکن اگر جنگ مسلط کی جاتی ہے تو پاک فوج اور عوام دفاع کرنا جانتی ہے۔

کرتار پور راہداری کے حوالے سے وزیر خارجہ نے کہا کہ راہداری کا 80 فیصد سے زائد کام مکمل ہو چکا ہے، بابا گرو نانک کے جنم دن پر سکھ کمیونٹی کو خوش آمدید کہیں گے۔

Facebook
Twitter
LinkedIn
Print
Email
WhatsApp

Never miss any important news. Subscribe to our newsletter.

آئی بی سی فیس بک پرفالو کریں

تجزیے و تبصرے