اتوار :03 مئی 2020 کی اہم عالمی خبریں

[pullquote]نئے کورونا وائرس کے متاثرين چونتيس لاکھ سے زائد[/pullquote]

دنیا بھر میں نئے کورونا وائرس کے انفیکشن کا شکار ہونے والوں کی تعداد 3,428,422 ہو گئی ہے۔ امريکی جانز ہاپکنز يونيورسٹی اينڈ ريسرچ سينٹر کے اتوار تين مئی کے اعداد و شمار کے مطابق کووڈ انیس کے سبب ہونے والی ہلاکتوں کی تعداد 242,831 ہے۔ کورونا وائرس سے سب سے زیادہ متاثرہ ملک امریکا ہے جہاں اس انفیکشن کا شکار ہونے والے افراد کی تعداد 1,133,069 ہے جبکہ امريکا ميں ہلاکتوں کی تعداد 66 ہزار سے زائد ہے۔ عالمی سطح پر 1,093,199 افراد اس بيماری سے صحت ياب بھی ہو چکے ہيں۔

[pullquote]ايران ميں مساجد کھولنے کا اعلان[/pullquote]

ايرانی صدر حسن روحانی نے ملک ميں مساجد کھولنے کا اعلان کيا ہے۔ ٹيلی وژن پر نشر کردہ اپنے خطاب ميں روحانی نے کہا کہ چار مئی سے ايران کے بيشتر صوبوں ميں مساجد کھول دی جائيں گی تاہم وائرس سے بچنے کے ليے انہوں نے احتياطی تدابير اور سماجی فاصلہ برقرار رکھنے پر بھی زور ديا۔ ايرانی صدر کے بقول اسلام ميں اپنی حفاظت کرنا لازم ہے جبکہ با جماعت نماز پر صرف زور ديا گيا ہے۔ انہوں نے مزيد بتايا کہ حکومت سولہ مئی سے اسکول کھولنے پر بھی غور کر رہی ہے۔ ايران ميں نئے کورونا وائرس کے متاثرين کی تعداد 96,440 جبکہ اس سبب ہلاک ہونے والوں کی تعداد 6,150 ہے۔

[pullquote]لاکھوں بچوں کو ويکسين کی فراہمی معطل، يونيسف[/pullquote]

اقوام متحدہ کے بچوں کی بہبود کے ادارے يونيسف نے خبردار کيا ہے کہ عالمی وبا کے باعث مشرق وسطی اور شمالی افريقہ کے خطوں ميں پوليو اور خسرے کے امراض سے بچاؤ کے ليے ويکسين کی مہم متاثر ہو سکتی ہے۔ يونيسف کے مطابق زيادہ تر ممالک وبا کے دوران بھی ويکسين کی مہمات جاری رکھے ہوئے ہيں تاہم چند ملکوں ميں يہ عمل روک ديا گيا ہے۔ نتيجتاً دس ملين بچے پوليو سے بچاؤ کے قطروں سے محروم رہ سکتے ہيں۔ پندرہ برس سے کم عمر کے پينتاليس لاکھ بچوں کو خسرے سے ٹيکے نہ لگائے جا سکيں گے۔ يونيسف نے ان مہمات کی فوری بحالی پر زور ديا ہے۔

[pullquote]کورونا وائرس، يورپ بھر ميں نرمياں کرنے کا عمل جاری[/pullquote]

يورپی بر اعظم ميں نئے کورونا وائرس کے متاثرين پندرہ لاکھ سے متجاوز ہيں تاہم کئی ملکوں ميں اس وبا کا پھیلاؤ سست ہو گيا ہے اور اسی سبب لاک ڈاؤن ميں نرمياں جاری ہيں۔ ہفتے دو مئی کو اڑتاليس ايام کی بندش کے بعد ہسپانوی باشندے پارکوں وغيرہ ميں جا سکے اور کھلی فضا ميں ورزش کر سکے۔ اٹلی ميں پير سے لوگوں کو رشتہ داروں سے ملنے اور پارکوں ميں جانے کی اجازت ہے۔ ہنگری ميں بھی چار مئی سے عجائب گھر، ريستوران، سوئمنگ پولز اور سمندر کنارے تفريحی مقامات کھل رہے ہيں۔ جرمنی ميں پابنديوں ميں سلسلہ وار نرمياں جاری ہيں اور آئندہ ہفتے سے کچھ اسکول کھل رہے ہيں۔ ماہرين نے البتہ پھر بھی احتياط برتنے پر زور ديا ہے۔

[pullquote]کورونا وائرس کے خلاف جہد و جہد کرنے والوں کو خراج تحسين[/pullquote]

کورونا وائرس کے خلاف جہد و جہد کرنے والے طبی کارکنوں اور ديگر شعبہ جات سے وابستہ ملازمين کو خراج تحسين پيش کرنے کے ليے گزشتہ روز دنيا کے کئی اہم مقامات پر خصوصی لائٹس روشن کی گئيں۔ دبئی کے برج الخليفہ، پيرس کے آئيفل ٹاور، نيو يارک کی امپائر اسٹيٹ بلڈنگ، چين کے مکاؤ ٹاور سميت کئی مشہور مقامات پر سفيد لائٹس روشن کی گئيں، جن کا مقصد کورونا وائرس کے خلاف جہد و جہد کرنے والوں کی بہادری اور جرات کو سراہنا تھا۔ #HeroesShineBright کے نام سے يہ مہم چوبيس اپريل کو نيو يارک سے شروع ہوئی تھی اور گزشتہ روز اپنے اختتام کو پہنچی۔

[pullquote]چين ميں معمولات زندگی بحال، عوام سياحتی مقامات کی طرف گامزن[/pullquote]

چينی باشندے اپنے ملک ميں سياحتی مقامات کا دوبارہ رخ کر رہے ہيں۔ چين ميں ان دنوں پانچ روزہ چھٹياں جاری ہيں۔ اس دوران دو دنوں کے اندر ڈيڑھ ملين سے زائد افراد بيجنگ کے دو مرکزی پارکس گئے۔ شنگھائی ميں بھی سياحتی مقامات پر ايک ملين سے زائد افراد جا چکے ہيں۔ يہ پيش رفت چين ميں کورونا وائرس کی وبا کے باعث عائد پابنديوں کے خاتمے کے بعد ديکھی گئی۔ چينی حکام نے البتہ بتايا ہے کہ تفريحی مقامات پر معمول سے تيس فيصد کم افراد جا رہے ہيں۔ نئے کورونا وائرس کی وبا پچھلے سال کے اختتام پر چينی شہر ووہان سے شروع ہوئی تھی۔

[pullquote]ڈی ڈبليو کا سالانہ آزادی صحافت ايوارڈ[/pullquote]

آج دنيا بھر ميں آزادی صحافت کا دن منايا جا رہا ہے۔ اس موقع پر جرمنی کے بين الاقوامی نشرياتی ادارے ڈی ڈبليو نے اپنا آزادی اظہار رائے کا سالانہ ايوارڈ ايسے صحافيوں کو ديا، جو عالمی وبا کے دوران بھی کام کرتے رہے۔ ڈی ڈبلیو کے ڈائريکٹر جنرل پيٹر لمبورگ کے بقول بہت سی حکومتيں بحران کو استعمال کرتے ہوئے آزادی اظہار رائے کو دبانے کی کوششوں ميں ہيں اور يوں آزاد صحافت اس وقت دنيا بھر ميں خطرے ميں ہے۔ يہ ايوارڈ بحران کے دور ميں صحافت کی اہميت کو اجاگر کرنے کے مقصد سے ديا گيا ہے۔ سابقہ طور پر يہ ايوارڈ سعودی بلاگر رائف بداوی، ايرانی پوليٹيکل سائنٹسٹ صادق زیباکلام اور ميکسيکو کی صحافی انابيل ہيرناڈيز کو بھی ديا جا چکا ہے۔

[pullquote]سری نگر: عليحدگی پسندوں کے ساتھ جھڑپ ميں دو سينئر فوجی افسران ہلاک[/pullquote]

بھارتی زير انتظام کشمير ميں ہفتے اور اتوار کی درميانی رات ہونے والی ايک جھڑپ ميں سکيورٹی فورسز کے پانچ ارکان کی ہلاکت کی اطلاع ہے۔ ان ميں بھارتی فوج کے دو سينیئر افسران بھی شامل ہيں۔ بھارتی فوج کے مطابق مرکزی شہر سری نگر سے قريب ستر کلوميٹر دور ہردوارا کے علاقے سے ہفتے کی رات اطلاع ملی کہ عليحدگی پسندوں نے چند شہريوں کو يرغمال بنا رکھا ہے۔ اس پر بھارتی فوج نے رات گئے کارروائی کی اور يرغماليوں کو بچا ليا گيا۔ عليحدگی پسندوں کے ساتھ فائرنگ کا تبادلہ کئی گھنٹوں تک جاری رہا، جس ميں يہ ہلاکتيں رونما ہوئيں۔ جھڑپ ميں دو باغی بھی مارے گئے۔

[pullquote]اڑتيس افغان مہاجرين کی ڈوبنے سے ہلاکت، الزام ايران پر[/pullquote]

افغانستان نے 38 افغان مہاجرين کے ڈوبنے کی ذمہ داری ايران پر عائد کی ہے۔ کابل حکومت کا الزام ہے کہ ايران ميں داخلے کی کوشش کرنے والے پچاس مہاجرين کو ايرانی بارڈر گارڈز نے مغربی افغان صوبے ہيرات کی سرحد کے قريب ايک دريا کی طرف دھکيل ديا۔ ان ميں سے بارہ تير کر بچ نکلے جبکہ بقيہ جان کی بازی ہار گئے۔ ضلع گلران کے دريا سے سات افراد کی لاشيں برآمد کر لی گئی ہيں۔ افغان وزارت خارجہ نے واقعے کی مکمل تفتيش شروع کر دی ہے۔ ايرانی حکام نے فی الحال اس الزام پر کوئی رد عمل ظاہر نہيں کيا۔

[pullquote]جنوبی کوريا اور شمالی کوريا کی سرحد پر فائرنگ کا تبادلہ[/pullquote]

جنوبی کوريا اور شمالی کوريا کی افواج کے مابين فائرنگ کا تبادلہ ہوا ہے۔ سيول حکام کا دعویٰ ہے کہ جزيرہ نما کوريا کے عين درميان واقع زون ميں اتوار تين مئی کی صبح پہلے شمالی کوريائی فوجيوں نے فائرنگ کی، جس کے جواب ميں جنوبی کوريائی افواج نے کارروائی کی۔ شمالی کوريائی فوج کی فائرنگ سے ايک فوجی پوسٹ متاثر ہوئی تاہم کوئی زخمی يا ہلاک نہيں ہوا۔ بعد ازاں سيول حکام نے ايک بيان ميں يہ بھی کہا ہے کہ شمالی کوريا کی جانب سے کی گئی فائرنگ ممکنہ طور پر غير دانستہ تھی۔ فی الحال اس پيش رفت پر پيونگ يانگ حکومت کا رد عمل سامنے نہيں آيا ہے۔

[pullquote]مصر ميں صحافت ايک جرم بن گئی، ايمنسٹی انٹرنيشنل[/pullquote]

ايمنسٹی انٹرنيشنل نے آج اتوار کو جاری کردہ ايک رپورٹ ميں کہا ہے کہ مصر ميں پچھلے چار برسوں کے دوران صحافت ايک جرم بن گئی ہے۔ ملک ميں نئے کورونا وائرس کے پھيلاؤ کے تناظر ميں عائد کی جانے والی پابنديوں کے ذریعے قاہرہ حکومت اپنی گرفت اور مضبوط کر رہی ہے۔ ايمنسٹی نے اپنی رپورٹ کے ليے سينتيس صحافيوں کے کيسز کا جائزہ ليا، جنہيں سن 2015 ميں منظور کردہ انسداد دہشت گردی کے ايک قانون کے تحت جعلی خبريں پھيلانے کے الزام پر حراست ميں ليا گيا۔ ايمنسٹی انٹرنيشنل کے مطابق ملک ميں کسی بھی قسم کی تنقيد اور شفاف رپورٹنگ کو دبانے کی کوششيں جاری ہيں۔ قاہرہ حکام ايسے تاثرات کو مسترد کرتے ہيں تاہم اس رپورٹ پر ابھی تک ان کا رد عمل سامنے نہيں آيا۔

[pullquote]جنوبی امريکا کے ملک پيرو ميں زلزلہ[/pullquote]

جنوبی امريکا کے ملک پيرو ميں ايک طاقت ور زلزلے کے جھٹکے محسوس کيے گئے۔ امريکی جيولوجيکل سروے (USGS) کے مطابق مقامی وقت کے مطابق ہفتے اور اتوار کی درميانی شب رات بارہ بج کر چواليس منٹ پر ملک کے جنوبی حصے ميں ساحلی پٹی پر يہ جھٹکے محسوس کيے گئے۔ ريکٹر اسکيل پر اس زلزلے کی شدت 5.7 بتائی گئی ہے۔ فوری طور پر کسی جانی و مالی نقصان کی اصلاع نہيں ہے۔ يہ زلزلہ لامپا شہر سے چھ کلوميٹر شمال مغرب کی طرف 185 کلوميٹر کی گہرائی ميں آيا۔

Facebook
Twitter
LinkedIn
Print
Email
WhatsApp

Never miss any important news. Subscribe to our newsletter.

آئی بی سی فیس بک پرفالو کریں

تجزیے و تبصرے